صدارتی انتخابات: کیا یوگا سے اقتدار کی تیاری میں ہیں رام دیو

0
251

یوگیش مشرا

Yogesh Mishra

یوگا میں شيرشاسن کراتے کراتے اقتدار کے سب سے اوپر بیٹھنے کی بابا رام دیو کی خواہش لہریں مارنے لگی ہیں. اس کے لئے ان کے حامیوں نے باقاعدہ لابينگ تیز بھی کر دی ہے. وشو ہندو پریشد نے بھی رام دیو کے صدر بننے کے لئے ہوا دینا شروع کر دی ہے.

کبھی اپنی پارٹی بنانے کی خواہش ظاہر کر کے سیاسی عزائم کے اشارہ دینے والے رام دیو اگلے صدارتی انتخابات میں اپنی امیدواری کو پختہ کرنے کے فراق میں ہیں. وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے بین الاقوامی یوگا دن کا لوہا منوانے کے بعد رام دیو بیرون ملک بھی مطابقت بڑھ گئی ہے. گزشتہ لوک سبھا انتخابات میں باقاعدہ بی جے پی کے لئے کام کرنے والے رام دیو کی حمایت میں لالو یادو، اکھلیش یادو، ملائم سنگھ یادو، نتیش کمار اور شرد یادو کی بھی رضا مندی ہو سکتی ہے.

ramdev
گزشتہ کافی عرصے سے رام دیو کی طرف اور اپوزیشن دونوں خیموں میں مطابقت برقرار رکھنے کے لئے تیزی سے لگے ہوئے ہیں. انہوں نے اپنا کاروبار بھی اتنا بڑا پھیلا لیا ہے کہ وہ اب يوگ گرو اور بڑے کاروباری کی شکل میں تعارف کے محتاج نہیں رہ گئے ہیں. لیکن ان کی اس خواہشات کے پنکھوں لگنے میں سب سے بڑی راہ میں حائل رکاوٹیں بھی وی ایچ پی کا ان ہونا اور ان کا کاروباری سلطنت ہی ہے. اس کے چلتے یوگا گرو کے پیروکار با آواز بلند مطالبہ نہیں کر پا رہے ہیں پر ان کی کوشش ہے کہ رام دیو کو مرکز میں حکومت چلا رہی بی جے پی ہی اس عہدے کے لئے مناسب مانے.

ramdev