زبان سنبھال کے

0
397
1 of 6

سہیل انجم

ابھی ابھی 9 نومبر یعنی علامہ اقبال کا یوم پیدائش، جس دن یوم اردو بھی منایا جاتا ہے، گزرا ہے لہٰذا گفتگو اسی موضوع سے شروع کی جاتی ہے۔ ہندوستان میں یوم اقبال منانے کا آغاز بہت بعد میں ہوا البتہ پاکستان میں ایک زمانے سے منایا جا رہا ہے۔ وہاں اس دن قومی تعطیل ہوا کرتی تھی۔ لیکن دو تین سال قبل تعطیل منسوخ کر دی گئی، پھر بحال بھی کر دی گئی۔ لیکن امسال پھر اسے ختم کر دیا گیا۔ اس کا اعلان پاکستان کے وزیر داخلہ احسن اقبال نے کیا۔ چونکہ ان کے نام میں اقبال بھی شامل ہے اس لیے شاید انھوں نے یہ تصور کر لیا ہے کہ اقبال سے متعلق فیصلے کرنے کا کاپی رائٹ انھی کے پاس ہے۔ خیر ہمیں اس سے کوئی غرض نہیں کہ اس دن پاکستان میں تعطیل ہو یا نہ ہو۔ لیکن انھوں نے اس کی جو وجہ بتائی وہ بڑی مضحکہ خیز ہے۔ اپنے حکم نامہ پر انھوں نے اقبال کا ایک شعر بھی درج کیا اور غلط درج کیا۔ شعر یوں ہے: میسر آتی ہے فرصت فقط غلاموں کو، نہیں ہے بندہ حُر کے لیے جہاں میں فراغ۔ لیکن انھوں نے ’فراغ‘ کو ’فراق‘ لکھ مارا۔ اس پر پاکستان کے ایک طنز و مزاح نگار میر شاہد نے ’اقبال دیر سے آتا ہے اس لیے چھٹی نہیں ملی‘ کے زیر عنوان احسن اقبال کی خاصی خبر لی ہے۔

 READ MORE

1 of 6