سپریم کورٹ نے کہا جج لويا کے تمام کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں ہی ہو گی

0
39

نئی دہلی: سی بی آئی جج بی ایچ لويا کی موت پر سپریم کورٹ میں سماعت شروع ہو گئی ہے. اس کیس کی سماعت چیف جسٹس دیپک مشرا کی قیادت والی بنچ کر رہا ہے. پیر (22 جنوری) کو سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ جج لويا سے جڑے معاملے کی سماعت اب کسی بھی ہائی کورٹ میں نہیں ہوگی. ساتھ ہی، بامبے ہائی کورٹ میں جو دو عرضیاں پینڈنگ ہیں، انہیں بھی سپریم کورٹ ٹرانسفر کیا جائے.

بتا دیں، کہ مہاراشٹر حکومت کی طرف سے سینئر وکیل ہریش سالوے نے اس کی اطلاع دی. وہیں، درخواست گزار کی جانب سے دشینت ڈیو نے سالوے کی مخالفت کی. انہوں نے کہا، کہ ‘ہریش سالوے امت شاہ کے دفاع میں پیش ہوئے تھے. اب وہ مہاراشٹر حکومت کی جانب سے ہیں. اس ادارے کی شبیہ خراب ہو رہی ہے. کورٹ کو اسے روکنا چاہئے. ‘

پینڈنگ عرضیاں سپریم کورٹ ٹرانسفر کریں
بتا دیں، کہ پیر کو سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے کہا کہ اب کسی بھی ہائی کورٹ میں جج لويا سے جڑے معاملے کی سماعت نہیں ہوگی. ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ بمبئی ہائی کورٹ میں اس معاملے سے منسلک جو دو عرضیاں پےڈگ ہیں، انہیں بھی سپریم کورٹ ٹرانسفر کیا جائے.

میڈیا گروپوں نے جج لويا کی موت پر اٹھائے تھے سوال
سپریم کورٹ نے نوٹس لیتے ہوئے کہا ہے کہ ‘بہت سے میڈیا گروپوں نے جج لويا کی موت پر سوال اٹھائے ہیں.’ کورٹ نے مزید کہا، کہ ‘اس معاملے کی سماعت اصولوں کے مطابق ہو گی. تمام وکلاء کو کورٹ کا ساتھ دینا چاہئے. ‘