دہلی سیریل دھماکے میں 11 سال بعد آیا فیصلہ، ایک ملزم کو سزا، 2 بری

0
11
1 of 2

نئی دہلی: قومی دارالحکومت دہلی میں 12 سال پہلے ہوئے سیریل بلاسٹ کے ایک معاملے میں عدالت نے جمعرات (16 فروری) کو اپنا فیصلہ سنا دیا. کورٹ نے تین میں سے دو ملزمان کو بری کرتے ہوئے طارق احمد ڈار کو مجرم قرار دیا. طارق احمد کو 10 سال کی سزا سنائی گئی ہے. واضح رہے کہ طارق پہلے ہی 13 سال کی سزا کاٹ چکا ہے.

بتا دیں کہ یہ بم دھماکے سال 2005 میں دیوالی سے ٹھیک ایک دن پہلے ہوا تھا. ان دھماکوں میں 60 لوگوں کی موت ہوئی تھی جبکہ 200 سے زیادہ لوگ زخمی ہو گئے تھے. ان دھماکوں کے پیچھے دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کا ہاتھ تھا.

کیا ہے معاملہ؟
-29 اکتوبر 2005 کو ملک کے دارالحکومت دہلی میں ایک کے بعد ایک کئی دھماکے ہوئے تھے.
ان دھماکوں سے پوری دہلی دہل گئی تھی.
ان دھماکوں میں دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کے طارق احمد ڈار، محمد حسین فاضل اور محمد رفیق شاہ کو اہم ملزم بنایا گیا تھا. -تارك کو ہی اس دھماکے کا ماسٹر مائنڈ سمجھا جاتا رہا ہے.
-كورٹ نے اس معاملے میں تینوں ملزمان پر ملک کے خلاف جنگ چھیڑنے، مجرمانہ سازش رچنے، قتل، قتل کی کوشش اور ہتھیار جمع کرنے کے الزام طے کئے تھے.

1 of 2