گری راج بولے پدماوتي ہندو تھیں اس لئے ایسے پیش کر رہے، ہمت ہے تو نبی صلی اللہ پر فلم بنائیں

0
9
1 of 4

نئی دہلی: مشہور فلم ساز اور ہدایت کار سنجے لیلا بھنسالی کی آنے والی فلم ‘پدماوتي’ کی شوٹنگ پر مچے ہنگامے میں اب بی جے پی لیڈر اوربڑ بولے مرکزی وزیر گری راج سنگھ بھی کود پڑے ہیں. گری راج نے پدماوتي کے خلاف ہو رہے کارکردگی کو جائز ٹھہرایا.

گری راج سنگھ نے پیر کو کہا کہ ملکہ پدماوتي کو اس لئے غلط طریقے سے پیش کیا جا رہا ہے کیونکہ وہ ہندو تھیں. ایک انگریزی اخبار میں شائع خبر کے مطابق انہوں نے کہا کہ فلم بنانے والے نبی محمد کے خلاف فلم بنانے کی ہمت نہیں دکھائیں گے. اس رپورٹ کے مطابق گری راج سنگھ نے یہ بھی کہا کہ ‘ہندوستان کی تاریخ کے ساتھ کھلواڑ کرنے والے لوگوں کو عوام کی طرف سے سزا کیا جانا چاہئے.’

ہندوستان کی تاریخ کے ساتھ کھلواڑ ہے
مرکزی وزیر نے یہ باتیں جے پور میں ایک پروگرام کے دوران کہی. گری راج سنگھ نے اس پروگرام سے ہٹ کر صحافیوں سے کہا، ‘ملک کی بدقسمتی ہے کہ یہاں اورنگزیب کو، ٹیپو سلطان کو آئن ماننے والے لوگ … ملک کی تاریخ کے ساتھ کھلواڑ کرکے … پدماوتي کے مثال کو جس طریقے سے پینٹ کیا گیا ہے … اگر وہ ہندو نہ ہوتی تو شاید کوئی ہمت نہ کرتا … اور جس نے بھی کی ہے، بھارت کی تاریخ کے ساتھ کھلواڑ ہے. ‘
ایسے لوگوں کو عوام سزا دے
گری راج نے مزید کہا، ‘ہندوستان کی مان مریادا کے ساتھ … پدماوتي نے اپنے آپ کو مٹا دیا، لیکن مغلوں کے آگے گھٹنے نہیں ٹیکے. اس لیے ایسے لوگوں کو یقینی طور پر عوام کو سزا دینی چاہئے. ‘

محمد صاحب کے خلاف فلم بنانے کی ہمت نہیں
بی جے پی رہنما یہیں نہیں رکے کہا، ہندو دیوی دیوتاؤں کے اوپر تو ایک سے ایک تبصرہ ہوتی ہے. پی جیسی فلمیں

بنا دیتے ہیں. کسی کی ہمت ہوئی ہے کہ محمد صاحب کے خلاف کوئی فلم بنا دے. ‘

1 of 4