باتھ روم میں چھپی ہوئی رقم، بینکوں میں واپس آئی: وینکایا

0
27

کولکتہ: نائب صدر ایم وینکیا نائیڈو نے مرکز کے اعتراض اور جی ایس ٹی اور نوٹبندي کے اقدامات کی تعریف کرتے ہوئے ہفتہ کو کہا کہ دونوں قدم عام لوگوں کو فائدہ پہنچانے اور بھارتی معیشت میں تبدیلی لانے ک مقصد سےاٹھائے گئے تھے. امریکی ایسوسی ایشن آف فزیشن آف انڈین اورجن کی طرف سے منعقد 11 ویں گلوبل صحت کا خیال اجلاس میں نائیڈو نے کہا، “جی ایس ٹی سے شروع میں لوگوں کو کچھ دقتیں ہوئیں، لیکن وسیع تناظر میں جی ایس ٹی بھارتی بینکاری نظام کو تبدیل کرنے والا ہے.”

نائیڈو نے یہ بھی کہا کہ آٹھ نومبر، 2016 کے نوٹبدي کے اقدامات کی کچھ لوگوں نے تنقید کی تھی، لیکن نوٹبدي سے اس بات کا یقین ہوا کہ جتنی بھی غیر اعلانیہ نقد ہے، وہ بینکوں میں آ سکے.

انہوں نے کہا، “میں نوٹبندي یا پنرمدريكر کے بارے میں ایک ہی چیز بول سکتا ہوں کہ جو پیسے بستروں کے نیچے یا باتھ روم کے نیچے چھپائے گئے تھے، وہ بینکوں میں واپس آ گئے. رقم ان کے ایڈریس کے ساتھ بینکوں کے پاس آیا. اب یہ بھارتی ریزرو بینک کو فیصلہ ہے کہ اس میں سے کتنا کالا دھن ہے یا کتنا سفید دولت ہے. “

نائب صدر نے نوٹبدي کے دوران لوگوں کو ہوئی تکلیف برداشت کی بھی تعریف کی اور اسے ‘طویل مدتی فوائد کے لئے مختصر مدت درد بتایا.’

انہوں نے کہا، “عام لوگ کافی سمجھتے ہیں. انہوں نے اس کی اہمیت کو سمجھا نہیں تو آپ کے پیسے کے لئے 51 دنوں تک قطار میں کھڑے رہنا کوئی مذاق نہیں ہے. نظام میں کوئی بھی بہتری عام لوگوں کی بہتری کے لئے ہے. “