پندرہ مہینے بعد بھارتی فوج کا پھر ‘سرجکل اسٹرائیک’، دیا منہ توڑ جواب

0
131

سرینگر: جموں و کشمیر میں منگل (26 دسمبر) کو لائن آف کنٹرول یعنی ایل او سی کے پار جاکر ہندوستانی فوج نے پاکستان کے خلاف ایک بار پھر بڑی کارروائی ہے. اپنے جوانوں کی شہادت کا بدلہ لے بھارتی فوج نے سرحد پار جا کر تین پاکستانی فوجیوں کو مار گرایا. بتا دیں، کہ ہندوستانی جوانوں نے پونچھ کے پاس راولاكوٹ سیکٹر میں اس کارروائی کو انجام دیا ہے.

معلوم ہو، کہ ہفتہ کو راجوری کے کیری علاقے میں کنٹرول لائن کے قریب پاکستانی فوج نے فائرنگ کی تھی. اس فائرنگ میں ہندوستانی فوج کا ایک میجر اور تین جوان شہید ہو گئے تھے. آپ انہی جوانوں کی شہادت کا بدلہ لینے کے لئے بھارتی فوجیوں نے آج سرحد پار جا کر یہ کارروائی کی ہے.

تین پاکستانی فوجی ڈھیر
بتایا جا رہا ہے کہ دراصل، ہندوستانی فوج ایل او سی پار کر شناخت لگا رہی تھی. اسی دوران پاکستانی فوجیوں کی جانب فائرنگ ہوئی. بھارتی فوجیوں نے بھی اس کا جواب دیا. اس کارروائی میں، تین پاکستانی فوجی ہلاک ہوئے. پاک سرحد میں گھس کر بھارتی جوانوں کی اس کارروائی کو ایک بار پھر ‘سرجکل اسٹرائیک’ کے طور پر دیکھا جا رہا ہے.

پندرہ مہینے کے بعد ، ایک بار پھرسرحد پار
غور طلب ہے، کہ اس سے پہلے بھارتی فوج کے جوانوں نے سال 2016 میں پاکستان کی سرحد میں گھس کر بڑی کارروائی کی تھی. 2016 میں 28 اور 29 ستمبر کی رات کنٹرول لائن کے اس پار جا کر بھارتی جوانوں نے سات دہشت گرد کیمپوں کو تباہ کیا تھا. اس کے بعد اسے سرجکل اسٹرائیک کا نام دیا گیا تھا. یہ کارروائی فوج نے ان دہشت گردوں کے خلاف کی تھی، جو کنٹرول لائن پار کر بھارت میں دراندازی کرنے کی سازش کر رہے تھے. بھارت نے یہ سرجکل اسٹرائیک جموں و کشمیر کے اري سیکٹر واقع فوجی کیمپ پر دہشت گردانہ حملے کے دو ہفتے بعد کی تھی. اس دہشت گردانہ حملے میں 19 بھارتی جوان شہید ہوئے تھے.

اس سال مئی میں بھی دیا تھا کرارا جواب
اس کے بعد ہندوستانی فوج نے پاکستانی فوج کے خلاف ایک بار پھر بڑی کارروائی کی تھی. ہندوستانی فوج نے نوشیرا سیکٹر میں 20-21 مئی کو اس آپریشن کو انجام دیا تھا. فوج نے مسلسل ہو رہی مداخلت کے خلاف یہ کارروائی کی تھی.

Facebook Comments