آرمی چیف کی سخت آگاہی- کشمیر میں اگر پتھر چلاوگے، تو گولی کھاؤ گے

جموں: جموں کشمیر نے دہشت گردوں کے ساتھ انکاؤنٹر میں شہید ہوئے فوجیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے بعد فوج کے سربراہ نے ناراضگی ظاہر کی ہے. انہوں نے سخت انتباہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر میں دہشت گردوں کی مدد کرنے والوں پر سخت کارروائی کی جائے گی فوج کے سربراہ نے کہا ہے کہ ‘کشمیر میں اگر پتھر چلاوگے، تو گولی کھاؤ گے.’

فوجی سربراہ کی یہ سخت انتباہ ان لوگوں کے لئے ہے جو دہشت گردوں کے خلاف ہو رہے آپریشن میں رکاوٹ بن رہے ہیں. فوجی سربراہ کا کہنا ہے کہ ایسے لوگوں کو گولی سے جواب دیا جائے گا. یہ سب انہوں نے اس لئے کہا کیونکہ 2 دن پہلے بانڈی پورہ کے هاجن میں جس ٹائم دہشت گردوں کے ساتھ تصادم چل رہی تھی، اسی ٹائم کچھ اراجک عنصر وہاں کارکردگی اور پتھر بازی بھی کر رہے تھے.

بانڈی پورہ اور هدواڑا تصادم میں ملک کے چار جوان شہید ہو گئے. وجہ یہ بتائی جارہی ہے کہ دہشت گردوں کے خلاف ہو رہی تصادم کے ٹائم کچھ لوگ پتھر بازی کرکے ہنگامہ کر رہے تھے. جنرل بپن راوت نے کہا ‘جس طرح سے مقامی لوگ دہشت گردوں کے خلاف ہو رہے آپریشن میں رکاوٹ بن رہے ہیں اور ان کی مدد کر رہے ہیں، اس کی وجہ سے جوانوں کی جانیں جا رہی ہیں. بہت سے مقامی لوگ تو دہشت گردوں کی فرار میں بھی مدد کر رہے ہیں، یہ شرمناک ہے.

انکاؤنٹر میں شہید فوجیوں کے جسد خاکی کو بدھ کو دہلی لایا گیا آرمی چیف جوانوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے پہنچے. تو وہیں شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے ملک کے وزیر اعظم بھی بغیر کسی طے شدہ پروگرام کے پہنچ گئے. پی ایم مودی جی سے بات چیت کے دوران آرمی چیف نے کہا کہ جموں کشمیر میں جن جوانوں نے ان کے لئے اپنی جان قربان کر دی، وہی لوگ دہشت گردوں کے دوست بن کر ان کی مدد کر رہے ہیں. بہت سے لوگ تو پاکستان کا جھنڈا بھی لہراتے ہیں. انہوں نے کہا کہ ایسے لوگوں کو بخشا نہیں جائے گا.