احتجاج کے بعد فلسطین نے اپنے سفیر کو واپس بلایا

0
43

ممبئی: موصولہ خبروں کے مطابق احتجاج کے بعد فلسطین نے اپنے سفیر کو واپس بلایا ہے. آپ کو بتا دیں، بھارت-فلسطین اتحاد فرنٹ (ايپيےسےپھ) نے جماعت الدعوة کے سربراہ اور ممبئی دہشت گردانہ حملے کے ماسٹر مائنڈ حافظ سعید کے ساتھ پاکستان میں فلسطینی سفیر ولید ابو علی طرف سے پلیٹ فارم اشتراک کرنے کی ہفتہ کو مذمت کی تھی.

آئی پی ایس ایف نے اپنے بیان میں کہا، “ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ صدر محمود عباس کی حکومت حافظ سعید کے ساتھ اسٹیج اشتراک پر سفیر ولید ابو علی کی مذمت کرے اور انہیں برخاست کرے.”

اس بیان آئی پی ایس ایف کی قومی کمیٹی کے ارکان سریش كھیرنار، کشور جگتاپ، جتن دیسائی، فیروز متھبوروالا طرف سے جاری کیا گیا ہے.

آئی پی ایس ایف نے کہا ہے، “حقیقت یہ ہے کہ یہ قابل مذمت کام اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں تاریخی ووٹنگ کے فورا بعد ہوا ہے، جہاں بھارت حکومت فلسطین کے ساتھ کھڑی رہی اور صدر ٹرمپ طرف یروشلم کو لے کر کی گئی اعلان کو مسترد کر دیا، جس کے بعد ایسا ہونا حیرت کی بات ہے. “

بیان میں کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ کے تمام قراردادوں میں بھارت نے مسلسل فلسطین کے حق میں ووٹ دیا ہے اور ملک (فلسطین) کی آزادی اور خود مختاری کے حق میں بین الاقوامی رضامندی کے ساتھ مشرقی یروشلم کو ملک کے دارالحکومت کے طور پر مانے جانے کے حق میں کھڑا رہا ہے.

وہیں، دوسری طرف فلسطین کے لیے عالمی اتحاد تحریک تیز ہوتا جا رہا ہے، ایسے میں فلسطینی نمائندوں کی اس طرح کی سرگرمیوں سے اسرائیل کے بسانے سے آزاد ہونے کے لئے ملک (فلسطین) کے آزادی جدوجہد کو صرف نقصان ہی پہنچے گا.

والد ابو علی نے جمعہ کو دائیں بازو کے گروپوں کی ایک شاخ دفاع پاکستان کی جانب سے منعقد ایک اجتماع میں سعید کے ساتھ اسٹیج اشتراک کیا تھا.

بھارتی وزارت خارجہ کے ترجمان رويش کمار کے مطابق، بھارت نے آج اس صورت میں سخت رد عمل ہے اور اس معاملے کو ہندوستان میں فلسطینی سفیر، فلسطین کے حکام کے سامنے اٹھانے پر غور کیا جا رہا ہے.