سپریم کورٹ کا عظیم فیصلہ سینما گھروں میں فلم دکھانے سے پہلے قومی ترانہ لازمی

0
6
National anthem Cinema Halls

نئی دہلی: قومی گیت کو لے کر سپریم کورٹ نے بدھ 30 نومبر کو بڑا فیصلہ سنایا ہے. اب فلم دکھانے سے پہلے سینما گھروں میں قومی ترانہ لازمی ہوگا. کورٹ نے کہا کہ سینما گھروں میں اسکرین پر پرچم دکھانا لازمی ہے. فلم اور سیریل کے درمیان قومی ترانہ نہیں بجایا جا سکتا ہے.

National anthem Cinema Halls

اس کے ساتھ ہی عدالت نے کہا ہے کہ ہر شہری کو قومی گیت کا احترام کرنا ہوگا. ریاستی حکومتوں کو ہدایات دی گئی ہیں کہ وہ توجہ رکھیں کہ کہاں قومی ترانہ کی توہین ہوئی ہے.

کورٹ نے دیا 10 دن کا وقت
-سپريم کورٹ نے اس حکم كےنفاذ کے لئے 10 دن کا وقت دیا ہے.
-كورٹ نے مرکزی حکومت سے کہا ہے کہ تمام ریاست کے چیف سکریٹریوں کو اس کی کاپی دے دی جائے.
-اسے الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا میں شائع کیا جائے.

سپریم کورٹ میں کئی دنوں سے چل رہا تھا معاملہ
سینما گھروں میں ہر فلم کے پہلے قومی بجانے کو لازمی کرنے کا معاملہ کئی دن سے سپریم کورٹ میں چل رہا تھا. سپریم کورٹ نے بدھ کو کہا کہ سینما گھروں میں قومی ترانہ بجنے کے وقت تمام ناظرین کو اس کے احترام میں کھڑا ہونا ہوگا.

National anthem Cinema Halls

کس نے دائر کی تھی پٹیشن
شیام نارائن چوکسی نے سپریم کورٹ میں عرضی داخل کر مطالبہ کیا تھا کہ سنیما ہال میں ہر فلم کی کارکردگی سے پہلے قوم ترانہ چل رہا ہے لازمی کیا جائے. پٹیشن میں کہا گیا ہے کہ قومی ہندوستان کی آزادی کا اٹوٹ حصہ ہے. اس سے جنوری جنوری کے جذبات وابستہ ہیں.

National anthem Cinema Halls

-ديپك مشرا کی سنگل بنچ نے یہ فیصلہ سنایا ہے.

-مهاراشٹر میں کولہاپور کی شیواجی یونیورسٹی نے اجتماعی قومی کے لئے پروگرام منعقد کیا ہے.

امیتابھ نے پہلے ہیں کی حمایت میں
امیتابھ بچن اور فلم ساز سجيت حکومت نے گزشتہ ستمبر میں کہا تھا کہ سنیما گھر اگر قومی ترانہ بجاتے ہیں تو یہ اچھی بات ہوگی. امیتابھ کا کہنا تھا کہ قومیترانہ سن کر بہت اچھا محسوس ہوتا ہے اور اس طرح کے اقدامات کرنا اچھا ہوگا.

” سینما گھروں میں قومی ترانہ بجانے کی روایت کافی سالوں سے رہی ہے. جب میں دہلی میں پڑھتا تھا تب ہم فلم دیکھنے جاتے تھے اور جب قومی ترانہ بجتا تھا تو ہمیں بہت اچھا محسوس ہوتا تھا. ”

انہوں نے کہا، ” میں جب بھی ممبئی کے کسی سنیما گھر میں جاتا ہوں اور قومی ترانہ بجتتا ہے تو جسم میں کپکپی پیدا ہو جاتی ہے. مجھے ہندوستانی ہونے پر بہت فخر محسوس ہوتا ہے. میں کولکتہ اور دہلی کے اپنے تمام دوستوں سے ممبئی آکر سنیما میں فلم دیکھنے کو کہتا ہوں. ”

وہیں اےایم آئی ایم ممبر اسمبلی امتیاز جلیل کا کہنا ہے کہ سنیما گھروں میں قومی بجانے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ لوگ وہاں تفریح کے لئے جاتے ہیں. سنیما میں محض قومی ترانہ کسی کو محب وطن نہیں بناتا.

National anthem Cinema Halls