مایاوتی نے کہا ایس پی کانگریس کا مشترکہ منشوربی ایس پی حکومت کی نقل، پہلے ہو چکاہے نافذ

Mayawati on Modi

لكھنو بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے سماج وادی پارٹی کانگریس کے منشور کو سابقہ کی بی ایس پی حکومت کی نقل بتاتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں گزشتہ حکومت میں پہلے ہی لاگو کیا جا چکا ہے. موجودہ حکومت نے اقتدار میں آتے ہی ان کو بند کر دیا یا پھر ان کا نام بدل کر انہیں جاری رکھا ہے. اب 10-پوائنٹ والے مشترکہ پروگرام قرار دے کر عوام کی آنکھوں میں دھول جھوكنے کی کوشش کی ہے، لیکن اب عوام دھوکہ کھانے والی نہیں ہے.

bsp

مایاوتی نے کہا کہ ریاست کے عوام اب بی جے پی کی انتخابی وعدہ خلافی کے ساتھ ایس پی اور کانگریس کی ہوا ہوائی اور کھوکھلی باتوں میں قطعی یقین کرنے والی نہیں ہے. جب پہلا مرحلے کی پولنگ کا دن تھا. اس دن سماج وادی پارٹی کے داغدار چہرے اور کانگریس کے یوراج نے پریس کانفرنس کر حکومت بننے پر لائن پروگرام کے 10-پوائنٹ اعلان کرنے کی جو ناٹك بازی ہے. اس کا صاف مطلب یہ ہے کہ انہوں نے مختلف اپنا جو منشور جاری کیا تھا. وہ ریاست کے عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے لئے ہی تھا. ایس پی، کانگریس اور بی جے پی بھی اپنے اپنے بیان خطوط کے ذریعے سے ایسی ہی ناٹكباجي کرتی رہتی ہے. ان کے قول اور فعل میں زمین آسمان کا فرق ہوتا ہے. عوام کو اس سے ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے.

سابق حکومت میں کئے گئے یہی کام
-مهامايا غریب مالی مدد کی منصوبہ بندی اور ساوتريباي پھولے لڑکیوں کی تعلیم کی مدد اسکیم نافذ کی جا چکی ہے.
-سكے تحت طالبات کو 15 ہزار کی حوصلہ افزائی رقم اور اسکول جانے کے لئے سائیکل کا انتظام کیا گیا تھا.
-١١ ویں پاس کرنے پر انہیں 10 ہزار روپے اضافی دینے کا انتظام کو سال 2009-10 میں ہی لاگو کیا گیا تھا.

-پولیس شعبہ میں جامع اصلاحات کے تحت ایک مشت دو لاکھ چار ہزار نئے عہدے منظور کرکے بحالی کی.
-ایک لاکھ 10 ہزار دیہات میں سپھايكرمي کے سرکاری عہدے منظور کر کے ان پر بحالی کی گئی.
-سركاري علاقوں کی بھرتی پر روک ہٹا کر سروسماج کے نوجوانوں اور بے روزگاروں کو مستقل ملازمت دی گئی.

-سگٹھت علاقے میں بھی روزگار کے نغمے مواقع پیدا کرکے فرار کو پوری طرح روکا گیا تھا.
-وظیفے کو بڑھا کر فائدہ اٹھانے والوں کے اکاؤنٹس میں براہ راست دینے کی نظام نافذ کرکے بدعنوانی روکنے کا کام کیا گیا.
-مهامايا غریب بچیوں آشیرواد منصوبہ بندی سے لڑکیوں کو 18 سال پر ایک لاکھ روپے دینے کی منصوبہ بندی کی گئی تھی.

bsp

شہری غریب رہائش منصوبہ بندی، سروجن ہتائے ‘غریب رہائش مالکانہ حق منصوبہ بندی، مہامایا سروجن رہائش منصوبہ بندی اور شہری دلت بستی مجموعی ترقی کی منصوبہ بندی وغیرہ کے ذریعے سے لاکھوں خاندانوں کو رہائش دیا گیا تھا.

bsp

کانپور اور لکھنؤ میں انتخابی جلسہ عام ١٤ کو
سابق وزیر اعلی مایاوتی کی 14 فروری (منگل) کو کانپور اور لکھنؤ میں انتخابی جلسہ عام ہے. اس پروگرام کے تحت ان کی پہلی جلسہ عام کانپور کے رامسهاي اٹر کالج میدان بیری شوراجپر کے سامنے کھیل کے میدان میں منعقد ہوگی اور دوسری انتخابی جلسہ عام لکھنؤ کے ي1-كام -1، سیتاپور روڈ، دبگگا بائی پاس، امرپالي منصوبہ بندی میں منعقد کی جائے گی. 15 فروری کو مایاوتی رائے بریلی اور بارہ بنکی میں جلسے سے خطاب کریں گی.