کرنل نظام الدین کا 117 سال کی عمر میں انتقال، نیتا جی سبھاش چندر بوس کے رہے تھے ڈرائیور

0
16
Colonel-Nizamuddin
1 of 3

اعظم گڑھ: نیتا جی سبھاش چندر بوس کے قریبی اور ان کے ڈرائیور کرنل نظام الدین کا انتقال ہو گیا ہے. پیر کو صبح نظام الدین نے 117 سال کی عمر میں آخری سانس لی. وہ طویل وقت سے بیمار تھے. ان کے چھوٹے بیٹے اکرم نے بتایا کہ پیر کو علی الصبح صبح 4 بجے ان کا انتقال ہوا. دوپہر قریب 2 بجے انہیں سپرد-اے-خاک کیا جائے گا. کرنل نظام الدین اعظم گڑھ کے مبارکپور کے رہنے والے تھے.

آخری بار کشتی پر چھوڑا تھا نیتا جی کو
کرنل نظام الدین بتایا کرتے تھے کہ انہوں نے 20 اگست 1947 کو نیتا جی کو انہوں نے برما میں چھتاگ دریا کے پاس آخری بار کشتی پر چھوڑا تھا. اس کے بعد ان کی کبھی ان سے ملاقات نہیں ہوئی. وہ نیتا جی کے پرسنل باڈی گارڈ تھے اور ان کے ساتھ بہت سے ممالک کے سفر پر جا چکے تھے.

نیتا جی سے وابستہ بتائے تھے یہ قصے
کرنل نظام الدین نے بتایا تھا کہ آزاد ہند فوج کے قیام کے ساتھ نیتا جی نے لوگوں کو رنگون میں جمع ہونے کو کہا تھا. جولائی 1943 کو برما، سنگاپور، رنگون اوورسیز-ہندوستانیوں نے فنڈ کے لئے 26 بوریوں سونے، چاندی، ہیرے جواہرات اور پیسوں سے نیتا جی کو ترازو میں تول دیا تھا. 18 اگست 1945 کو جس وقت نیتا جی کے موت کی خبر ریڈیو پر چلی، اسے وہ نیتا جی کے ساتھ ہی بیٹھ کر ورما کے جنگل میں سن رہے تھے.

ایک دن میں جمع ہوئے تھے بیس کروڑ روپے
نظام الدین کے بتایا تھا، ‘ہم نے پیٹھ پر لاد کر بوریوں کو خزانے میں رکھا تھا. سب نے حلف لی تھی کہ ملک کی آزادی کے لئے سب کچھ قربان کر دیں گے. لوگوں کا پیار دیکھ کر نیتا جی جذباتی ہو اٹھے تھے. ‘9 جولائی 1943 کو نیتا جی نے نعرہ دیا،’ کرو تمام نيوچھاور بنو تمام فقیر. ‘اس نعرے کے بعد رنگون میں آزاد ہند فوج بینک میں ایک دن میں 20 کروڑ روپے جمع ہو گئے. اس کے بعد اکتوبر 1943 میں آزاد ہند حکومت کو منظوری مل گئی.

نیتا جی دن میں دو بار تبدیل کرتےتھے بھیس
– نیتا جی کو دھوتی کرتہ اور گلابی گمچھا بہت پسند تھا. فوج کے قیام کے بعد وہ فوجی بھیس میں رہتے تھے.
– وہ 24 گھنٹے میں وہ دو بار کپڑے تبدیل تھے. رات کو سوتے وقت بھی وہ اکثر بغیر کسی کو بتائے اپنا مقام بدل دیتے تھے.
– اپنے افسروں سے بھی وہ خفیہ پلان حصص نہ کرتے تھے.

1 of 3