پانچ ریاستوں میں گنتی جاری، پہلے رجحانات میں یوپی میں بی جے پی آگے

0
13

نئی دہلی،:اترپردیش-اتراکھنڈ سمیت پنجاب، گوا اور منی پور میں ہوئے اسمبلی انتخابات میں ووٹوں کی گنتی شروع ہو چکی ہے. مشین سے پوسٹل بیلیٹ کی گنتی ہو رہی ہے. اتر پردیش سے پہلا رجحانات آنا شروع ہو گیا ہے. بی جے پی یوپی میں آگے چل رہی ہے، وہیں پنجاب میں کانگریس برتری بنائے ہوئے ہے. اتراکھنڈ سے بھی پہلے رجحانات آ گیا ہے. گوا اور منی پور سے بھی رجحانات آنا شروع ہو گئے ہیں.

یوپی میں 117 نشستوں کے رجحانات میں بی جے پی سیٹوں پر آگے، 24 پر اتحاد (ایس پی + کانگریس) آگے. وہیں بی ایس پی 12 سیٹوں پر آگے ہے، جبکہ دیگر چار سیٹ میں. پنجاب میں 26 سیٹوں میں کانگریس 17 سیٹوں پر آگے ہے. اکالی دل تین اور آپ کو چھ پر آگے ہے. اتراکھنڈ میں بی جے پی تین، کانگریس دو سیٹ پر آگے ہیں.

بی جے پی لیڈر شاہنواز حسین نے کہا کہ جو کہتے تھے کہ میرا ملک نہیں اصل میں ملک کے لوگوں کی سوچ بدل رہی ہے. انتخابات ہوں گے کوئی جیتے گا کوئی کھو دیتا لیکن ملک کو آگے جانا ہے. لوک سبھا انتخابات کی طرح لوگوں میں اس انتخاب میں بھی جوش ہے.

بی جے پی لیڈر جگدمبیکا پال نے کہا، سماجوادی پارٹی اور بی ایس پی سے اب لوگوں کو موہ تحلیل ہو چکا ہے. مرکز کی مودی حکومت پر غریبوں کو اعتماد ہے. راہل گاندھی اور اکھلیش یادو نے کوشش کی لیکن وہ ناکام رہے. یوپی ہی نہیں دیگر ریاستوں میں بھی بی جے پی کی حکومت بنے گی.

وہیں اتراکھنڈ کے صوبائی صدر کشور اپادھیائے نے کہا، ہریش اور نوجوانوں کے درمیان میں کوئی ناراضگی نہیں ہے. انہوں نے کہا کہ ایگزٹ پول غلط ثابت ہوں گے اور کانگریس ایک بار پردیش میں دوبارہ واپسی کرے گی.

ایس پی لیڈر نوید صدیقی نے کہا، بہار میں بی جے پی کے پٹاکھی اور گلاب جامن آ گئے تھے لیکن بعد میں وہ دھرے رہ گئے تھے. یوپی میں بھی ایگزٹ پول ایسے ہی ثابت ہوں گے.

شیو پال یادو نے کہا، ووٹنگ کا انتظار ہے. ہماری بڑی جیت ہونی طے ہے. بی ایس پی کے ساتھ جانے والے اکھلیش کے بیان پر بولے تھوڑا انتظار کریں.

ووٹوں کی گنتی شروع ہونے سے پہلے لکھنؤ کی کینٹ اسمبلی سیٹ کی بی جے پی امیدوار ریتا بہوگنا جوشی حضرت گنج کے ہنومان مندر پہنچی اور پوجا ارچنا کی. اس کے علاوہ بی جے پی لیڈر برجیش ریڈر، سواتی سنگھ بھی نتائج والے دن صبح صبح مندر پہنچے.

جمعرات کو آئے ایگزٹ پول کے نتائج میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) یوپی-اتراکھنڈ کے علاوہ گوا، منی پور میں اپنی برتری کو لے کر حوصلہ افزائی ہے. وہیں سماج وادی پارٹی (ایس پی) -كاگرےس اتحاد اور بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) نے انہیں مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ نتیجے ان کے حق میں آئیں گے. تاہم ایگزٹ پول میں پنجاب میں کانگریس کی اقتدار میں واپسی اور اکالی دل اور بی جے پی اتحاد کی بڑی شکست کے اشارے دیے ہیں. پنجاب میں کانگریس کے علاوہ عام آدمی پارٹی (آپ) بھی چونکانے والے نتائج دے سکتی ہے.

یوپی کی بات کریں تو انتخابات کے دوران بی جے پی، ایس پی کانگریس اتحاد اور بی ایس پی میں اہم مقابلہ رہا. پردیش کے نتیجے وزیر اعظم نریندر مودی کی مقبولیت اور نومبر میں نوٹبدي کے ان کے فیصلے کا پیمانہ مان کر بھی دیکھا جا رہا ہے. وہیں نتائج سے وزیر اعلی اکھلیش یادو کی ترقی کے دعووں کی بھی پرکھ ہوگی. اتراکھنڈ اور منی پور میں حکمران کانگریس کے سامنے بی جے پی کی واپسی کو روکنے کا چیلنج ہے.