اب اصل سائز کا نصف ہی بچا کوہ نور ہیرا

koh e noor

جے پور. برطانیہ میں رہنے والی بھارتی صحافی انیتا آنند نے کہا ہے کہ ہم آج جس کوہ نور کو جانتے ہیں، وہ اس کی اصل شکل کو اب نصف ہی بچا ہے. پرنس البرٹ نے اس ہیرے کی چمک بڑھانے کے لئے اسے کٹوایا تھا.

صحافی نے اس ہیرے کی دلچسپ سفر کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ قیمتی ہیرے انگلینڈ میں جہاز سے پہنچا تھا اور لوگوں کو دکھانے کے لئے روشن پنجرے میں رکھا گیا لیکن ہیرے میں چمک نہ ہونے کی وجہ سے یہ لوگ متاثر نہیں کر پایا.

koh e noor

جے پور ادب فیسٹیول کے 10 ویں انعقاد کے ایک سیشن میں انیتا نے کہا، ‘انگلینڈ میں لوگوں نے کوہ نور کو ایک کرسٹل کا ٹکڑا سمجھتے ہوئے اس کا مذاق اڑایا کیونکہ یہ چمک نہیں رہا تھا.’ انیتا نے مشہور مورخ ولیم ڈےلرپل کے ساتھ مل کر ‘کوہ نور: دی کہانی آف دی ورلڈس سب سے زیادہ انفیمس ڈائمنڈ ‘کتاب لکھی ہے.

koh e noor